اکثر پوچھے جانے والے سوالات



FAQ's آغوش

آغوش پروگرام سے مالی امداد حاصل کرنے کے لیے کیا شرائط ہیں؟

پروگرام میں شامل ہونے کی بنیادی شرائط بینظیر انکم سپورٹ پروگرام(BISP)سے مستفید ہونے والے خاندان سے تعلق (بہو یا خود مستفید) اور حاملہ یا دو سال سے کم عمر بچے کی ماں ہونا ہے۔

اگر میرے گھرانے میں کوئی حاملہ خاتون یا دودھ پلانے والی ماں نہ تو کیا پھر بھی میں آغوش پروگرام کا حصہ بن سکتا ہوں؟

نہیں، اس پروگرام میں شریک ہونے کے لیے ضروری ہے کہ کوئی خاتون BISPسے مستفید ہونے والے خاندان کی رکن ہونے کے ساتھ ساتھ حاملہ یا دوسال سے کم عمر بچے کی ماں ہو۔

میں بینظیر انکم سپورٹ پروگرام سے مستفید ہونے والے خاندان کی بہو ہوں لیکن آغوش پروگرام کے تحت ملنے والی مالی امداد میں شامل نہیں ہوں۔

BISP سروے کے بعد BISP مالی امداد پروگرام سے مستفید ہونے والوں میں سے جو خواتین بہو کے طور پر خاندان میں شامل ہوئی ہیں انہیںنادرا آفس جاکر اپنے شجرہ نسب کی تجدید کرانی ہوگی۔ تاکہBISPسے مستفید ہونے والے کے گھر انے سے رشتہ قائم ہو سکے۔

میں بینظیر انکم سپورٹ پروگرام سے مستفید ہونے والے خاندان کی بہو ہوں لیکن آغوش پروگرام کے تحت ملنے والی مالی امداد میں شامل نہیں ہوں۔

نہیں، یہ پروگرام پنجاب حکومت کی طرف سے پنجاب سوشل پروٹیکشن اتھارٹی اور محکمہ صحت کے ذریعے ورلڈ بینک کے تعاون سے شروع کیا جارہاہے۔

کیا مجھے آغوش پروگرام کے بارے میں معلومات حاصل کرنے کے لیے بینظیر انکم سپورٹ پروگرام سے رابطہ کرنا پڑے گا؟

پروگرام کے بارے میں معلومات حاصل کرنے کے لیے، مراکزِ صحت، مثلاً بنیادی مرکز صحت،دیہی صحت مراکز، تحصیل ہیڈ کوارٹرز/ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹرز (اسپتال) پر جائیں یا محکمہ صحت کی ہیلپ لائن-1221 یا پنجاب سوشل پروٹیکشن اتھارٹی سے درج ذیل نمبر پر رابطہ کریں۔ ہیلپ لائن: PSPA فون نمبر: 042-99232359-60

کیا آغوش پروگرام میں اندراج کے لیے گھر کی دہلیز پر معلومات حاصل کی جائیں گی یا اس کے لیے کوئی اور جگہ مختص کی گئی ہے؟

اگر آپ بنیادی اہلیت کے معیار/پیمانے پر پورا اترتے ہیں، تو آپ کو اپنا ڈیٹا قریبی مرکز صحت میں رجسٹر کرانا ہوگا۔

مجھے کیسے معلوم ہوگا کہ میرا نام پروگرام میں شامل ہے؟

اگر آپ بنیادی اہلیت کے معیار پر پورا اترتے ہیں اور آپ نے اپنا ڈیٹا قریبی بنیادی مرکز صحت میں رجسٹر کرایا ہے، تو آپ کو اپنے موبائل فون پر ٹیکسٹ میسج کے ذریعے مطلع کیا جائے گا۔

پروگرام میں اندراج کی کیا فیس ہے؟

پروگرام میں اندراج کی کوئی فیس نہیں ہے۔ اگر کوئی آپ سے مانگے تو براہ کرم فوری طور پر ہیلپ لائن 1221 پر رابطہ کریں۔

میں حاملہ ہوں اور 18 سال سے کم عمر ہوں جس کی وجہ سے میرا شناختی کارڈ نہیں بن سکا، کیا میں آغوش پروگرام میں رجسٹر ہو سکتی ہوں؟

اس پروگرام میں شامل ہونے کے لیے، آپ کے پاس اپنا شناختی کارڈ ہونا ضروری ہے اور آپ کا تعلق بینظیر انکم سپورٹ پروگرام سے مستفید ہونے والے خاندان سے ہونا چاہیے، بصورت دیگر آپ صرف ہیلتھ چیک اپ اور مفت ادویات حاصل کر سکیں گی۔

میرے پاس ذاتی موبائل اور قومی شناختی کارڈ نہیں ہے۔ مجھے کیا کرنا چاہیے؟

موبائل اور شناختی کارڈ نمبر پروگرام میں شامل ہونے کا واحد ذریعہ ہوں گے، اس لیے ایسی تمام خواتین نادرا آفس جا کر اپنا شناختی کارڈ حاصل کریں اور بنیادی مرکز صحت میں معلومات فراہم کریں۔

کیا مالی امداد کے لیے بینظیر انکم سپورٹ پروگرام کا کارڈ پرائمری ہیلتھ سینٹر میں دکھانا پڑے گا؟

نہیں، اس پروگرام کے تحت کی جانے والی ادائیگیوں کے لیے فنگر پرنٹ (بایو میٹرک) تصدیقی عمل کا استعمال کیا جا رہا ہے۔ صرف تصدیق کی صورت میں، عورت بینک کی طرف سے مقرر کردہ مراکز (پے پوائنٹس) سے رقم نکال سکے گی، بشرطیکہ وہ محکمہ صحت کے مقرر کردہ شیڈول کے مطابق تشخیص اور زچگی کی سہولیات کے فوائد حاصل کرے۔

میرے فنگر پرنٹس کی حالت اچھی نہیں ہیں، مجھے آغوش پروگرام میں شامل کرنے کے لیے کیا کرنا ہوگا؟

اس صورت میں آپ کو شناخت/تصدیق کے عمل کے لیے بینک آف پنجاب کی قریبی برانچ میں جانا ہوگا۔

کیا میرا نمایندہ رقم نکالنے کے لیے جاسکتا ہے؟

نہیں، کیونکہ صارف کی بایو میٹرک تصدیق رقم نکالنے کے لیے ایک شرط ہے۔

کیا رقم بینک کے ذریعے حاصل کی جاسکتی ہے؟

پروگرام سے مستفید ہونے والی خواتین کی سہولت کے لیے بینک آف پنجاب کی طرف سے نامزد کردہ قریبی HBL کنیکٹ مراکز پر مقامی سطح پر رقم نکالنے کی سہولت فراہم کی جائے گی۔ تاہم جن خواتین کی فنگر پرنٹ کی خرابی کی وجہ سے شناخت نہیں ہو سکتی انہیں شناخت کے لیے بینک کی برانچ میں جانا ہو گا۔

ہیلتھ اینڈ نیوٹریشن کنڈیشنل کیشٓ ٹرانسفر(H&N-CCT) پروگرام کا بنیادی مقصد کیا ہے؟

اس پروگرام کا بنیادی مقصد ماں اور بچے کی صحت اور غذائیت کا خیال رکھنا ہے۔ جس کے تحت حاملہ خواتین اور دو سال سے کم عمر بچوں کی مائیں اس سے مستفید ہو سکتی ہیں۔ اس پروگرام میں حاملہ خواتین کے سہ ماہی طبی معائنے، تربیت یافتہ عملے کے ساتھ زچگی کا عمل، دو سال سے کم عمر کے بچوں کے لیے حفاظتی ٹیکوں کے کورس، پیدائش کا اندراج، غذائیت، حفظان صحت اور خاندانی منصوبہ بندی سے متعلق آگاہی شامل ہیں۔



FAQ's خود مختار

اگر کوئی داماد اپنے پورے خاندان کے ساتھ مستقل طور پر سسرال میں شفٹ ہو جائے جہاں ساس بینظیرانکم سپورٹ پروگرام سے مستفید(بسپ بینفشری)ہواور جوڑے کی عمر اہلیت کے دائرے میں آتی ہو اور ان کا بچہ پانچ سال سے کم عمر کا ہو، کیااس صورت میں جوڑے کا معاشی شمولیتی عنصرکے تحت اندراج کرنا چاہیے؟

BISPسے مستفیدان خاتون کا صرف اہل خاندان (داماد/بہو) پروگرام میں اندراج کے لیے اہل ہوگا۔داماد کا تعلق کسی دوسرے گھرانے سے ہے جس کی مالی حیثیت بہترہو سکتی ہے۔ اس لیے ممکن ہے کہ اسے کسی مالی امداد کی ضرورت نہ ہو۔ اس بات کو دیکھتے ہوئے، ایسے معاملات کو نااہل سمجھا جائے گا کیونکہ اس مرحلے پر ان کی حیثیت/خاندان میں حصہ داری کی تصدیق نہیں کی جا سکتی ہے۔

ایسے حالات کے تحت، مطلوبہ حد سے چھ ماہ تک زیادہ عمر کے فرق کے معاملات قابل قبول ہوں گے۔

اگرایک نوجوان جوڑا (بسپ بینفشری)گھرانے میں موجود ہے اور ان کا ایک بچہ ہے جس کی عمر پانچ سے کم ہے لیکن وہ قومی شناختی کارڈ پر تاریخ پیدائش کے مطابق عمر کے معیار یعنی 29 سال اور دو ماہ کی عمر سے صرف 02 سے 03 ماہ بڑے ہیں۔ اس صورت میں، کیا ہم جوڑے کا PHCIP کے تحت اندراج کر سکتے ہیں؟

اگر (بسپ بینفشری) کا انتقال ہو گیا اور نوجوان جوڑا پانچ سال سے کم عمر بچے کے ساتھ عمر کے دائرے میں ہو۔ اس صورت میں ہمیں اس جوڑے کا اندراج کرنا چاہیے یا نہیں؟

اس نوعیت کے معاملات کو پہلے BISP سے اپنی حیثیت کلیئر کروانے کی ضرورت ہوگی، بصورت دیگر ان کو اہل نہیں سمجھا جائے گا۔

اگرایک،عمر کے دائرے کے اندر نوجوان جوڑا فعال(بسپ بینفشری)ہے اوران کا پانچ سال سے کم عمربچہ ہے لیکن ان کا ریکارڈ فراہم کردہ BISP ڈیٹا میں موجود نہیں ہے۔ اس صورت میں اندراج کی حیثیت کیا ہونی چاہیے؟

اس صورت میں، گھریلو کوائف نامہ پْر کیا جائے گا اور جوڑے سے درخواست کی جائے گی کہ وہ(بسپ بینفشری)کے ساتھ اپنا رشتہ ثابت کرنے کے لیے نادرا میں اپنے شجرہ نسب کی تجدید کرائیں۔ رشتے کا ثبوت جمع کروانے کے بعد، پروگرام میں خاندان کو شامل/خارج کرنے کا فیصلہ اسی کے مطابق لیا جائے گا۔

اگرکوئی نوجوان جوڑا(بسپ بینفشری)گھرانے میں موجود ہے اور ان کی عمر نکاح نامہ سے تصدیق شدہ ہے لیکن ان کے پاس CNIC نہیں ہے۔

گھریلو کوائف نامہ پْر ہو جائے گا۔ تاہم، مستفید ہونے والے کو CNIC حاصل کرنے کے ساتھ ساتھ نادرا میں اپنے شجرہ نسب کی تجدید کروانی ہوگی تاکہ وہ BISP سے مستفید ہونے والے گھرانے کے ساتھ اپنارشتہ ثابت کر سکے۔

کمیونٹی میں کچھ خدشات ہیں کہ اگر وہ اس پراجیکٹ کے تحت اندراج کراتے ہیں تو BISPکی طرف سے UTCامداد روک دی جائے گی اور انہوں نے معیارپر پورا اترنے کے باوجود اس منصوبے کا حصہ بننے سے فوراً انکار کردیا۔

PHCIPکے تحت BISP کے مستفیدین کو فراہم کی جانے والی ترغیب BISP کی طرف سے فراہم کردہ UCT رقم کے علاوہ ہے تاکہ گھرانوں کو ان کی فلاح و بہبود کی حالت کو بہتر بنانے میں مدد ملے۔ کسی بھی BISP مستفید کو EI پیکیج کی فراہمی کا BISP کی طرف سے مستحقین کو فراہم کردہ UCT گرانٹ پر کوئی اثر نہیں پڑے گا ،جب تک کہ وہ UCT کے لیے BISP کے ہدف/انتخاب کے معیار پر پورا اترتے ہوں۔

اگر (بسپ بینفشری)کی اکلوتی بیٹی ہے جو شادی شدہ تھی اور گھر سے چلی گئی تھی لیکن کسی حادثے کی وجہ سے بیٹی اور داماد فوت ہو گئے تھے لیکن پانچ سال سے کم عمر نواسی نانی کے ساتھ رہ رہی ہو جو کہ(بسپ بینفشری) ہے۔ لہٰذا، اس صورت میںPHCIP کے تحت اندراج کی حیثیت کیا ہونی چاہیے۔

پروگرام کا فوکس BISPسے مستفید ہونے والے گھرانوں کے نوجوان جوڑوں کی مایوسی اور محرومی پر قابو پانا ہے تاکہ انہیں آمدنی پیدا کرنے کی سرگرمیوں کی ترغیب دی جاسکے/میں شامل کیا جا سکے۔ اس کو دیکھتے ہوئے، توجہ کا بنیادی مرکزان نوجوان جوڑوں کوہدف بنانا ہوگا جو اہلیت کے معیار پر پورا اترتے ہیں۔

کیا بچے کی عمر کی تصدیق کے لیے ویکسینیشن کارڈ قابل قبول ہوگا؟

ہاں، یہ قابل قبول ہوگا لیکن اسے دستاویزی ثبوت کے حصے کے طور پر پراجیکٹ ٹیم کو جمع کرانے کے لیے انہیں مقامی حکومت سے پیدائش کا سرٹیفکیٹ بھی حاصل کرنا ہوگا۔

اگر BISP سے مستفید ہونے والے کاشناختی کارڈ دوسری تحصیل سے ہے، لیکن بچوں کا پیدائشی سرٹیفکیٹ اور بچوں کا ویکسی نیشن کارڈ موجودہ تحصیل کا ہے۔ کیا ہمیں انہیں اپنے پروگرام میں شامل کرنا چاہیے؟

ہاں، کوئی بھی گھرانہ جو ٹارگٹ اضلاع کا رہائشی ہے اور خود BISP سے فعال مستفید ہونے والا ہے یا اندراج کے وقت ایک نئی بہوگھرانے میں شامل ہوئی ہے، وہ اس پروگرام کے لیے اہل ہو گا ۔چاہے وہ ضلع کے اندر کسی بھی مقام پر ہوں۔

اگر BISP سے مستفید ہونے والی دوسری شادی کرتی ہے اور اس کے بیٹے کے پاس اپنے اصل والد کے نام کا شناختی کارڈ ہے۔تو ہم اس قسم کے کیس سے کیسے نمٹ سکتے ہیں؟کیا اپنے سوتیلے باپ اور ماں کے ساتھ رہنے والا بیٹا (BISP مستفید) EI معاونت کا اہل ہو گا؟

خاندان EI کا اہل ہو گا، بشرطیکہ بیٹا اب بھی اپنی ماں کے ساتھ رہ رہا ہو جو BISP کی ایک فعال مستفیدہے۔ دوسری صورت حال میں، بیٹا ایسی صورت میں اہل نہیں ہوگا جب وہ اپنے سگے والد کے ساتھ اس کے گھر رہتا ہے۔

اگر BISP سے مستفید کے بیٹے کے پاس کرائے پر کھیت میں کام کرنے کے لیے ٹریکٹر ہے، تو کیا ہم اس جوڑے کو اپنے پروگرام میں شامل کر سکتے ہیں؟

اس نوعیت کے معاملات کو کمیونٹی گروپس کے سامنے پیش کیا جانا چاہیے تاکہ پروگرام میں شامل ہونے/مسترد کرنے کے لیے حقیقی غریب/ضرورت مند فرد کے طور پر ان کی حیثیت کی توثیق کی جا سکے۔

اگرBISP سے مستفید کے شوہر کے پاس 10 ایکڑ زرعی زمین ہے، اور وہBISP پروگرام سے رقم وصول کر رہے ہیں، تو کیا ہم انہیں اپنے پروگرام میں شامل کریں؟

اس نوعیت کے معاملات کو کمیونٹی گروپس کے سامنے پیش کیا جانا چاہیے تاکہ پروگرام میں شامل ہونے/مسترد کرنے کے لیے حقیقی غریب/ضرورت مند فرد کے طور پر ان کی حیثیت کی توثیق کی جا سکے۔

اگر BISP سے مستفید گھر میں جانور،مثلاً بھیڑیں (تقریباً 20 سے 30) پالتا ہے، وہ چھوٹے پیمانے پر مویشیوں کا کاروبار (بیوپاری) کرتے ہیں، تو کیا اس صورت میں مستفیدPHCIP پروگرام کے لیے اہل ہے؟

اس نوعیت کے معاملات کو کمیونٹی گروپس کے سامنے پیش کیا جانا چاہیے تاکہ پروگرام میں شامل ہونے/مسترد کرنے کے لیے حقیقی غریب/ضرورت مند فرد کے طور پر ان کی حیثیت کی توثیق کی جا سکے۔

اگر BISP سے مستفید سربراہ کی موت ہو گئی ہو اور پانچ سال سے کم عمر بچے کے ساتھ اہل نوجوان جوڑا موجود ہو ۔ اس صورت میں ہمیں اس جوڑے کا اندراج کرنا چاہیے یا نہیں؟

اس پروگرام ڈیزائن کی شرط BISP سے فعال مستفید(بسپ بینفشری)ہونا ہے، لہذا اگر(بسپ بینفشری)کی موت ہو جاتی ہے تو اس بات کا بہت امکان ہے کہ خاندان BISP سے UCT کی رقم وصول کرنا بند کر دے گا کیونکہ اس کی طرف سے ادائیگیاں حاصل کرنے کے لیے، مستفید ہونے والوں کو BVS کے عمل سے گزرنا پڑتا ہے۔ اس نوعیت کے معاملات کو BISP سے BISP مستفید کنندہ کے طور پر ان کی حیثیت کے بارے میں وضاحت درکار ہوگی جس کی بنیاد پر پروگرام میں شامل ہونے/مسترد کرنے کا فیصلہ کیا جائے گا۔.

BISPسے مستفید ہونے والے کے گھر میں اثاثے ہیں، وہ کھاتے پیتے لگتے ہیں لیکن کمیونٹی ممبران/ قابل ذکر افراد ان گھروں کو ضرورت مند/ اہل قرار دیتے ہیں۔

اس نوعیت کے معاملات کو کمیونٹی گروپس کے سامنے پیش کیا جانا چاہیے تاکہ پروگرام میں شامل ہونے/مسترد کرنے کے لیے حقیقی غریب/ضرورت مند فرد کے طور پر ان کی حیثیت کی توثیق کی جا سکے۔

اگرچہ خاندان اہل ہے، لیکن انہوں نے اپنا بچہ کسی اور کوگود دے دیا ہے۔ کیا اس صورت میں یہ جوڑا اہل ہو سکتا ہے؟

خاندان کے دعوے کی تصدیق کی بنیاد پر، خاندان کو پروگرام کے لیے اہل سمجھا جا سکتا ہے۔

BISP مستفید کی موت کی صورت میں، کیا ہم ان کے بچوں کو اپنے پروگرام میں شامل کر سکتے ہیں؟

اندراج کے لیے غور نہیں کیا جانا چاہیے، کیونکہ غیر مشروط نقد رقم منتقل نہیں کی جا رہی ہے۔



FAQ's بنیاد

ارلی چائلڈ ہڈ کیئر اینڈ ایجوکیشن یعنی ای سی سی ای کی کیا اہمیت ہے؟

جدید تحقیق کے مطابق تین سے پانچ سال کی عمر، بچے کی ذہنی و جسمانی نشوونما میں سب سے زیادہ اہمیت کی حامل ہوتی ہے اس عمر میں وہ جو کچھ بھی سیکھتا ہے اس کا اثر اس کی آئندہ زندگی پر پڑتا ہے اس لیے ماہرین تعلیم ای سی سی ای یعنی بچپن کی ابتدائی تعلیم کو غیر معمولی اہمیت دیتے ہیں۔

پی ایچ سی آ ئی پی کے بنیاد پروگرام کے تحت بنائے جانے وا لے ای سی سی ای کلاس رومز دوسری پرائمری کلاسز سے کیسے مختلف ہیں؟

بنیاد کے تحت بنائے گئے ای سی سی ای کلاس رومز بچوں کے لیے کھیل ہی کھیل میں سیکھنے کا ایک محفوظ ذریعہ ہیں۔ اس کلاس میں دی جانے والی تعلیم کوئی کتابی تعلیم نہیں ہوتی بلکہ کھیل ہی کھیل میں بچے کی تربیت کا ایک جامع نصاب ہوتا ہے، جس میں مندرجہ ذیل پر خصوصی توجہ دی جاتی ہے۔ • سوچنے اور سمجھنے کی صلاحیت کی نشوونما • کھیل کود اور صحت مند جسمانی سرگرمیوں کی حوصلہ افزائی • جذباتی اور اخلاقی رویوں کی تشکیل اس کلاس میں بچے کی مختلف صلاحیتوں کی نشوونما کے لیے مندرجہ ذیل کارنر بنائے جاتے ہیں، جہاں کھیل ہی کھیل میں بچوں کی تعلیم و تربیت کی جاتی ہے۔ • صحت و صفائی کے بنیادی اصول سکھانے کے لیے ہیلتھ اینڈ ہائی جین کارنر • بنیادی سائنسی اصولوں کے لیے سائنسی کارنر • ریاضی اور گنتی سکھانے کے لیے ریاضی کارنر • مختلف زبانیں سکھانے اور ادبی ذوق کے لیے لینگویج اینڈ لٹریسی کارنر • اس دنیا کے بارے میں جاننے کے لیے جغرافیہ کارنر • تخلیقی صلاحیتیں اجاگر کرنے کے لیے آرٹ و کلچر کا رنر

ای سی سی ای کلاس روم میں کس عمر کے بچے داخلہ لینے کے اہل ہیں؟

تین سے پانچ سال کے بچے ای سی سی ای کلاس روم میں داخلہ لینے کے اہل ہیں۔

ای سی سی ای کلاس روم میں پڑھنے والے بچوں سے ماہانہ کتنی فیس لی جاتی ہے؟ 4

ان کلاسز میں پڑھنے والے بچوں کے لیے تعلیم بالکل مفت ہے۔

پی ایچ سی آئی پی کے تحت بنیاد پروگرام کو کتنے اضلاح میں شروع کیا جائے گا؟

بنیاد پروگرام میں 11 اضلاع بہاولنگر، بہاولپور، بھکر، ڈیرہ غازی خان، خوشاب، میانوالی، رحیم یار خان، مظفر گڑھ، لیہ، لودھراں اور راجن پور شا مل ہیں۔

بنیاد کے تحت کتنے سکولوں میں ای سی سی ای کی سہولیات فراہم کی جائیں گی؟

بنیاد کے تحت 11 اضلاع کے 3400 سکولوں میں ای سی سی ای کی سہولیات فراہم کی جائیں گی۔

بنیاد کے لیے 3400 سکولوں کا انتخاب کس طرح کیا جائے گا؟

بنیاد کے لیے 3400 سکولوں کا انتخاب ایک متعین کردہ طریقہ کار کے تحت کیا گیا ہے، جس میں سکولوں میں تدریسی کلاس رومز کی تعداد، ٹیچرز کی تعداد، ای سی سی ای کلاس روم کی بہتر حالت اور کمرے کا سائز شامل ہے۔

پی ایچ سی آئی پی کا مختصر تعارف اور تعلیم کے حوالے سے کیے جانے والے اقدامات کی تفصیل کیا ہے

پنجاب حکومت، خصوصاً سکول ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ اور ورلڈ بینک کی مدد سے پنجاب ہیومن کیپیٹل انویسٹمنٹ پراجیکٹ ایک 5 سا لہ منصوبہ ہے۔ پنجاب کے منتخب اضلاع میں تعلیم، صحت اور سوشل پروٹیکشن کے لیے 300 ملین ڈالر کے اس پراجیکٹ کا مقصد لوگوں کو تعلیم، صحت، سماجی اور معاشی ترقی کے وسیع مواقع فراہم کرنا ہے۔ اس پراجیکٹ میں تعلیم کے شعبے میں، چھوٹے بچوں کی کلاسز جنہیں ہم ارلی چائلڈ ہڈ کیئر اینڈ ایجوکیشن (ای سی سی ای) کلاس روم کہتے ہیں، ان کے تعلیمی معیار کے حوا لے سے بہت سے اہم اقدامات شامل ہیں۔ اس پرا جیکٹ کے تحت منتخب کردہ 3400 سکولوں میں مندرجہ ذیل اقدامات کیے جا رہے ہیں۔ • سکول کونسل ممبران کے ذریعے ای سی سی ای کلاس روم کے اندر درکار چھوٹی موٹی مرمت اور نئے رنگ و روغن کا کام۔ • ای سی سی ای کٹ تعلیمی مواد اور بچوں کے بیٹھنے کے لیے کارپٹ اور فرنیچر (میز اور کرسیاں) کی فراہمی۔ • ای سی سی ای ٹیچر کو ٹیبلٹ اور بچوں کو پڑھانے کے لیے دیگر تدریسی مواد کی فراہمی۔ • ای سی سی ای سے لے کر تیسری جماعت تک کلاس رومز میں لائبریری کارنرز بنانے کے لیے کتابوں اور الماریوں کی فراہمی۔ • ای سی سی ای ٹیچر، بچوں کی دیکھ بھال کے لیے مقرر افراد، پہلی سے تیسری کلاس کے اساتذہ، ہیڈ ٹیچر، اسسٹنٹ ایجوکیشن آفیسر اور سکول کونسل ممبران کی تربیت۔

اس وقت پنجاب کے کتنے گورنمنٹ سکولوں میں ای سی سی ای کلاس روم کی سہولت موجود ہے؟

اس وقت پنجاب کے 35 اضلاع کے 13000 سے زائد سکولوں میں ای سی سی ای کلاس رومز کی سہولت موجود ہے۔ اس پر اجیکٹ کے تحت 11 اضلاع کے مز ید 3400 سکولوں میں موجود تدریسی کلاس رومز میں سے ا یک منتخب شدہ کلاس میں ای سی سی ای کی سہولت فراہم کی جارہی ہے۔

بنیاد کے لیے منتخب کردہ 3400 سکولوں کے علاوہ مزید سکولوں کا انتخاب کیا جاسکتا ہے؟

بنیاد کے لیے سکولوں کے انتخاب کا عمل مکمل کرلیا گیا ہے، اب مزید کسی بھی سکول کو شامل نہیں کیا جاسکتا ہے۔

بچوں کو ای سی سی ای کلاس میں کب داخل کروایا جاسکتا ہے؟

ہر سال مارچ سے اپریل اور ستمبر سے اکتوبر تک بچوں کے لیے داخلہ مہم جا ری رہتی ہے۔ اس کے علاوہ داخلہ کے حوالے سے معلومات حاصل کرنے کے لیے متعلقہ سکول کے ہیڈ ٹیچر سے را بطہ کریں۔

میں اپنے علاقے میں موجود ا یسے سکول ،جن میں ای سی سی ای کی سہولت موجود ہو، کے بارے میں معلومات کس طرح حاصل کرسکتا ہوں؟

ای سی سی ای سکولوں کے بارے میں معلومات محکمہ تعلیم کے دفتر سے حاصل کی جاسکتی ہیں۔

بنیاد کے تحت کس طرح کی ٹریننگ دی جائے گی؟

بنیاد کے تحت منتخب کردہ سکولوں کے ای سی سی ای ٹیچرز، بچوں کی دیکھ بھال کے لیے مقرر افراد اور پہلی سے تیسری کلاس کے اساتذہ کو ای سی سی ای اور بچوں کی ارلی لرننگ کے حوالے سے ٹریننگ دی جائے گی۔ اس کے علاوہ ہیڈ ٹیچرز، اسسٹنٹ ایجوکیشن آفیسرز اور سکول کونسل ممبران کو لیڈرشپ ٹریننگ دی جائے گی۔

بنیاد کے تحت تعلیمی اقدامات کے حوا لے سے ا پنی شکایت کا اندراج کس طرح کروایا جاسکتا ہے؟

کسی بھی طرح کی شکایت کی صورت میں ذیل میں دیے گئے سکول ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ کی ہاٹ لائن یا ویب سائٹ پر موجود شکایت پورٹل پر جاکر اپنی شکایت درج کی جاسکتی ہے۔ سکول ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ ہاٹ لائن نمبر 042-111-11-2020 سکول ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ پورٹل لنک https://crm.punjab.gov.pk

ای سی سی ای کے بارے میں مزید معلومات کہاں سے حاصل کی جاسکتی ہیں؟

ای سی سی ای کے بارے میں مزید جاننے کے لیے ارلی چائلڈ ہڈ ایجوکیشن پالیسی 2017 اور ارلی چائلڈ ہڈ کیئر اینڈ ایجوکیشن سنگل نیشنل کریکولم 2020 ملاحظہ کریں۔ ذیل میں دیے گئے لنک پر کلک کرکے متعلقہ دستاویزات ڈاؤن لوڈ کی جاسکتی ہیں۔ ارلی چائلڈ ہڈ ایجوکیشن پالیسی 2017 https://pctb.punjab.gov.pk/system/files/Punjab%20ECE%20Policy%202017.pdf ارلی چائلڈ ہڈ کیئر اینڈ ایجوکیشن سنگل نیشنل کریکولرلم 2020 https://mofept.gov.pk/SiteImage/Misc/files/ECCE%20-20Grade%20Pre%20I.pdf